ڈائریکٹریٹ آف کالجز اینڈ ہائیر ایجوکیشن بلوچستان کی جانب سے حالیہ سال کی مختص نشتوں کی نومینیشن لیٹرز جاری کرنے میں توسیع اور غیر سنجیدگی کا مظاہرہ ناقابلِ برداشت عمل ہے۔ اِس عمل کی شدید مذمت کرتے ہیں اور ایک ایکس(ٹویٹر) کیمپین کا اعلان کرتے ہیں۔


 ڈائریکٹریٹ آف کالجز اینڈ ہائیر ایجوکیشن بلوچستان کی جانب سے حالیہ سال کی مختص نشتوں کی نومینیشن لیٹرز جاری کرنے میں توسیع اور غیر

   سنجیدگی کا مظاہرہ ناقابلِ برداشت عمل ہے۔ اِس عمل کی شدید مذمت کرتے ہیں اور ایک ایکس(ٹویٹر) کیمپین کا اعلان کرتے ہیں۔

‎بی ایس سی پنجاب


‎بلوچ اسٹوڈنٹس کونسل پنجاب کے ترجمان نے اپنی جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ  ڈائریکٹریٹ آف کالجز اینڈ ہائیر ایجوکیشن بلوچستان پچھلے دو تین سالوں سے بلوچستاں کے طلباء کے لئے مختص نشتوں پر طلباء کو 

مختلف قسم کے مسائل سے دو چار کر رہا ہے۔ 2022 کے تعلیمی سال کے داخلوں کے دوراں اقرباء پروری اور سفارش کے ذریعے میرٹ کی پامالی کی گئی تھی اس کے علاوہ کچھ یونیورسٹیوں میں فیس طلب کرنا اور سیٹوں میں کمی کرنا بھی شامل ہیں۔ گزشتہ سال اس ڈیمیرٹکریسی کی وجہ سے جو ہلچل پیش آئی تھی جس سے طلباء کو بہت دیر بعد نومینیشن لیٹر مہیا کئیے گئے تھے اور انکے داخلوں میں حد درجہ  دشواری پیش آئی تھی۔ بالکل اسی طرح اس سال بھی ڈائریکٹریٹ سست روی اور نااہلی کا مظاہرہ کر رہا ہے جس سے یہی خدشہ ہے کہ پچھلے سال کی طرح طلباء کو مشکلات میں دکھیلا جا رہا ہے۔ 

ڈائریکٹریٹ نے ایک مہینہ قبل طلباء سے ٹیسٹ بھی لیا تھا اور ایک مدت کی تاخیر کے بعد بالآخر نامزدگاں کی لسٹ بھی آویزان کر دیئے مگر نامزد طلباء کو نومینیشن لیٹر جاری کرنے میں تاریخ پہ تاریخ کا سہارہ لے رہا ہے جو طلباء کے مسقبل کے ساتھ کھلواڑ کرنے کا مترادف ہے کیونکہ تمام جامعات میں نئے تعلیمی سال کے کلاسز کا آغاز تقریباً ایک مہینے سے ہو چکا ہے اور ایک ہفتے میں درمیانی مدت (مِڈ ٹرم) کے امتحانات بھی شروع ہوں گے اور ان امتحانات کے بعد کوئی یونیورسٹی آسانی سے داخلہ بھی نہیں دیتا اگر دے بھی دیں تو وہ طلباء جو ابھی تک داخلے کی امید پہ بیٹھا ہے  پھر وہ کیسے یہ سب کچھ انتظام کر پائے گا۔ لہذا اگر سست روی کی وجہ سے کسی طلباء کو داخلہ نہیں ملتا تو اس کا زمہ دار ڈائریکٹریٹ کو ہی ٹھرایا جائے گا۔ 

ترجمان نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ ڈائریکٹریٹ آف کالجز اینڈ ہائیر ایجوکیشن بلوچستان کو متوجہ کرتے ہوئے خدشہ ظاہر کرتے ہیں کہ ہو سکتا ہے اس بلاجواز تاخیر کا سبب پچھلے سال کی طرح اقرباء پروری اور میرٹ کی پامالی کو فروغ دینے کا ارادہ ہو جسے ہم ہرگز قبول نہیں کرسکتے اور ہر ممکن حد تک اس کے خلاف عملی صورت میں کھڑے رہیں گے۔

آخر میں بی ایس سی پنجاب کے ترجمان نے کہا ہے آج ہم باقاعدہ اپنے ایکس کیمپین کا اعلان کرتے ہیں اور تمام طلباء ، صحافی حضرات اور غیور عوام سے گزارش کرتے ہیں کہ وہ اس کیمپین کا حصہ بنیں۔

Previous Post Next Post